علوی کا منی بجٹ آرڈیننس منظور کرنے سے انکار

3

منگل کے روز، صدر عارف علوی نے وفاقی آرڈیننس کی منظوری کی درخواست مسترد کر دی اور 6.5 بلین ڈالر کے تعطل کا شکار بیل آؤٹ پیکج بحال کرنے کے لیے بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) کی شرائط کے مطابق اضافی محصولات بڑھانے کے لیے ایک نیا ٹیکس شروع کیا۔

صدر کے دفتر سے جاری ہونے والے ایک سرکاری بیان کے مطابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے صدر سے ملاقات کی اور آئی ایم ایف کے ساتھ مذاکرات میں پیش رفت اور تمام طے شدہ طریقوں سے آگاہ کیا۔

البی نے بین الاقوامی مالیاتی فنڈ کے ساتھ ایک معاہدے پر بات چیت میں حکومت کی کوششوں پر شکریہ ادا کیا، مزید کہا کہ انہوں نے یقین دلایا کہ پاکستانی حکومت اس سلسلے میں اپنے عزم کی حمایت کرے گی۔

وزیر نے کہا کہ حکومت کو امید ہے کہ قواعد و ضوابط کو نافذ کرکے ٹیکسوں کے ذریعے اضافی ریونیو میں اضافہ ہوگا۔

تاہم صدر نے کہا کہ اس اہم مسئلہ پر کانگریس کو خفیہ رکھنا اور فوری طور پر اجلاس بلانا زیادہ مناسب ہے تاکہ بل کو بلا تاخیر نافذ کیا جا سکے۔

حکومت نے اب تک آئی ایم ایف کی طرف سے مقرر کردہ بجلی اور گیس کی قیمتوں میں اضافے کے لیے دو ابتدائی اقدامات کیے ہیں، دیگر شرائط کے ساتھ ساتھ عملے کی سطح پر معاہدے کیے ہیں۔

تفصیلات سے پتہ چلتا ہے کہ گیس صارفین کو صرف چھ ماہ میں 310 کروڑ روپے کا سرچارج ادا کرنا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: کارڈ پر 170b روپے کا منی بجٹ

حکومت نے جون تک مزید 237 ارب روپے وصول کرنے کے لیے پہلے ہی بجلی کا ٹیرف 3.30 روپے سے بڑھا کر 15.52 روپے فی یونٹ کر دیا تھا۔ جون 2023 تک ٹیکسوں میں اضافے کی صورت میں 189 ارب روپے کا ایک اور بوجھ ڈالا جائے گا۔

مجموعی طور پر، ان تینوں اقدامات سے عوام کو صرف چھ مہینوں میں 736 کروڑ روپے کی اضافی لاگت آئے گی۔ حکومت کی جانب سے آئی ایم ایف کے پروگراموں کو بروقت شروع کرنے میں ناکامی کی وجہ سے یہ بڑھتی ہوئی لاگت ہے۔

پاکستان نے آئی ایم ایف سے کیا معاہدہ کیا؟

ذیل میں وہ اہم نکات ہیں جن کے بارے میں پاکستانی حکام کا کہنا ہے کہ وہ آئی ایم ایف کے ساتھ معاہدہ کر چکے ہیں۔

حکومت کا تیل پر ٹیکس بڑھانے کا موجودہ وعدہ پورا کیا جائے گا۔ یکم مارچ اور یکم اپریل کو ڈیزل ٹیکس میں دو مرتبہ 5 روپے فی لیٹر اضافہ کیا جائے گا۔

آئی ایم ایف کی تجویز کردہ انرجی ریفارمز پر بحث کی جائے گی اور پاکستان کی کابینہ ان کی منظوری دے گی۔ اس میں پاکستان کا اپنے گردشی قرضے کو مکمل طور پر کم کرنا بھی شامل ہے۔ یہ عوامی قرضوں کی ایک قسم ہے جو بجلی کے شعبے میں سبسڈی اور بقایا بلوں کی وجہ سے جمع ہوتا ہے۔

گردشی قرضوں کا مکمل خاتمہ فوری ضرورت نہیں تھی۔ اس دوران پاکستان گیس سے متعلق گردشی قرضے میں اضافہ نہیں کرے گا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

تازہ ترین
سونے کی قیمت میں آج کتنے ہزار کا اضافہ ہوا؟ اس وائرل انفیکشن کی علامات کیا ہیں؟ سونے کی فی تولہ قیمت 1200 روپے کم ہوگئی بلنگ میں بے ضابطگیاں، کے الیکٹرک و ڈسکوز کو انکوائری رپورٹ کی سفارشات پر عملدرآمد کا حکم ڈالر 282 روپے 30 پیسے کا ہو گیا برطانوی ایچ آئی وی ویکسین کی آزمائش کے حوصلہ افزا نتائج آئی ایم ایف کے ساتھ نئے قرض پروگرام کیلئے وزارتِ خزانہ کی ورکنگ نئی حکومت کے ساتھ پالیسیز پر کام کرنے کے منتظر ہیں: ڈائریکٹر آئی ایم ایف پاکستان نئے آئی ایم ایف پروگرام میں 6 ارب ڈالر قرضے کی درخواست کرے گا، بلومبرگ نگراں حکومت کی جانب سے لیے گئے مقامی قرضوں کی تفصیلات جاری خیبر پختونخوا کا آئندہ 4 ماہ کا بجٹ تیار وفاقی کابینہ نے رمضان ریلیف پیکج کی منظوری دیدی سونے کی فی تولہ قیمت 2 لاکھ 15 ہزار کی سطح پر مستحکم پاکستان نے رواں مالی سال کے پہلے 6 ماہ میں 7.3 ارب ڈالر کی ادائیگیاں کیں،اسٹیٹ بینک آئی ایم ایف کے 26 میں سے 25 اہداف پر عملدرآمد مکمل