LHC نے انسداد غداری کی درخواست جج کریم کو بھیج دی۔

2

لاہور:

پیر کے روز، لاہور ہائی کورٹ (ایل ایچ سی) نے غداری کے قانون کو کالعدم قرار دینے کی درخواست جج شاہد کریم کو بھیجی اور کہا کہ وہ اسی طرح کے مقدمات کی سماعت کر رہی ہے۔

جج شجاعت علی خان نے مقامی وکیل شاہد رانا کے مطالبات پر سماعت کی، جس میں موقف اختیار کیا گیا کہ سیڈیشن ایکٹ برطانوی استعمار کا ایک حصہ ہے اور اسے لوگوں کو غلام بنانے کے لیے استعمال کیا گیا ہے۔

درخواست گزاروں کا کہنا ہے کہ پاکستان پینل کوڈ (PPC) کی دفعہ 124-A، 153-A، اور 505 بنیادی حقوق سے متصادم ہیں کیونکہ سیاسی فائدے کے لیے قانون کے ذریعے شہریوں کا استحصال کیا جاتا ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ سپریم کورٹ آف انڈیا نے بغاوت ایکٹ کے نفاذ کو معطل کر دیا ہے، اسے برطانوی دور کی پیداوار قرار دیا ہے، لیکن وہ عبوری ریلیف دے کر بغاوت کے مقدمات اور ٹرائل کو بھی معطل کر رہی ہے۔

پاکستان کے آئین کے تحت شہریوں کو ان کے بنیادی حقوق سے محروم کر کے ریاستی جبر کا نشانہ نہیں بنایا جا سکتا، درخواست گزاروں نے برطانوی دور کے بغاوت کے قوانین کو غیر آئینی قرار دیتے ہوئے عدالت سے استفسار کیا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

تازہ ترین
اسلام آباد و لورالائی کے ماحولیاتی نمونوں میں پولیو وائرس کی تصدیق عید پر مریضوں و لواحقین کو ناشتہ و کھانا دینگے: لاہور جنرل اسپتال انتظامیہ مویشی منڈی میں بشتر جانور بک گئے فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ، بجلی قیمت میں 3 روپے 41 پیسے اضافے کی درخواست سونے کی فی تولہ قیمت میں 200 روپے کی کمی کراچی میں عید الاضحی سے قبل سبزیوں کی قیمتوں میں اضافہ مقامی طور پر تیار بچوں کے دودھ پر 18 فیصد سیلز ٹیکس لگانے کی تجویز پر غور کون زیادہ گوشت کھاتا ہے! مرد یا خواتین؟ پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں اس مرتبہ کاروباری ہفتہ ریکارڈ ساز رہا ٹی ڈیپ کی زیر سرپرستی 11 پاکستانی کمپنیوں کے وفد کا دورہ ہیوسٹن، تجارتی معاملات پر گفتگو نیپرا نے بجلی کے بنیادی ٹیرف میں 5.72 روپے فی یونٹ اضافے کی منظوری دے دی پیٹرول کی قیمت میں بڑی کمی کردی گئی پاکستان شیئر بازار نے 77 ہزار کی حد عبور کرلی کریڈٹ یا ڈیبٹ کارڈ قبول نہ کرنیوالے دکاندار کا کاروبار سِیل ہو گا: ایف بی آر ڈیفالٹ سے دوچار کمپنیوں کیلئے ریگولرائزیشن اسکیم متعارف