کراچی میں کم عمر گھریلو ملازمہ کو تشدد کر کے قتل کر دیا گیا۔

6

پولیس نے جمعہ کو کراچی کے ضلع گلشن اقبال میں ایک کم عمر گھریلو ملازمہ کو اس کی رہائش گاہ پر تشدد اور قتل کرنے کے الزام میں ایک خاتون کو گرفتار کر لیا۔

کے مطابق ایکسپریس نیوزجمعرات کو شہر قائد کے علاقے گلشن اقبال 13-D میں گھر سے 13 سالہ لڑکے کی لاش برآمد ہوئی۔

گھر کے مالک، آجر نے دعویٰ کیا تھا کہ ایک کم عمر کارکن رکشہ سے گر کر شدید زخمی اور زخمی ہو گیا تھا۔

کم عمر لڑکے کے والد نے پولیس کو بتایا کہ اس کے تین بچے خاتون کے گھر کام کرتے تھے۔ اس نے خاتون پر اپنے بچوں پر تشدد کرنے اور بیٹے کو قتل کرنے کا الزام لگایا۔ والد نے مزید کہا کہ دیگر دو بچوں کی لاشوں پر بھی تشدد کے نشانات ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: کم عمر ٹیلی کمیوٹر جاں بحق، بھائی زخمی

مقتول کے بھائی نے بھی پولیس کو بیان ریکارڈ کرایا۔

پولیس نے متاثرہ کے والد کی شکایت پر تشدد اور قتل کا مقدمہ درج کرنے کے بعد خاتون کو گرفتار کر لیا۔

ایڈیشنل آئی جی کراچی جاوید عالم اوڈھو نے واقعے میں غفلت برتنے پر ڈی ایس پی ابو طلحہ اور مقامی اسٹیشن ہاؤس آفیسر (ایس ایچ او) کو بھی معطل کردیا ہے۔

ایس ایس پی ایسٹ زبیر شیخ نے کہا کہ پولیس افسران کو نااہلی کا مظاہرہ کرنے، قتل کی ابتدائی معلوماتی رپورٹ (ایف آئی آر) درج کرنے میں ناکامی اور لاش کا پوسٹ مارٹم کرانے میں ناکامی پر معطل کیا گیا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

تازہ ترین