علوی، عمران نے ای سی پی کو کے پی، پنجاب میں الیکشن کے دن کا اعلان نہ کرنے کا ذمہ دار ٹھہرایا۔

3

لاہور:

عمران خان، سابق وزیر اعظم اور پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین، جمعرات کو اپنی آئینی ذمہ داری پوری کرنے میں ناکام رہے جب پاکستان الیکٹورل کمیشن (ای سی پی) پنجاب اور خیبرپختونخوا صوبوں میں انتخابات کی تاریخیں فراہم کرنے میں ناکام رہا۔

عمران نے یہ ریمارکس صدر عارف علوی سے گفتگو کرتے ہوئے کہے جنہوں نے زمان پارک میں سابق وزیراعظم کی رہائش گاہ پر ان کی عیادت کی۔

دونوں رہنماؤں نے موجودہ سیاسی صورتحال اور پنجاب اور خیبرپختونخوا (کے پی) کے انتخابات پر تبادلہ خیال کیا۔

دریں اثنا، عمران کی رہائش گاہ کے باہر میڈیا سے بات کرتے ہوئے، پی ٹی آئی رہنما فاروق حبیب نے دعوی کیا کہ "کچھ نامعلوم قوتیں” ملک کے انتخابات میں مداخلت کرنے کی کوشش کر رہی ہیں۔

انہوں نے مزید کہا، "وفاقی وزارت خزانہ اور وفاقی وزارت داخلہ کی جانب سے حالیہ مواصلات نامعلوم طاقتوں کی درخواست پر انتخابات کے لیے فنڈز اور سیکیورٹی فراہم کرنے میں ان کی ہچکچاہٹ کو ظاہر کرتے ہیں۔”

ایک سرکاری بیان میں، حبیب نے کہا کہ وزارت خزانہ کے پاس انتخابات کے انعقاد کے لیے فنڈز نہیں ہیں، لیکن انہوں نے دعویٰ کیا کہ رانا صنور کی وزارت داخلہ نے ایک خط لکھا تھا جس میں کہا گیا تھا کہ وہ انتخابات کے لیے سیکیورٹی فراہم نہیں کر سکتی۔

مزید پڑھیں: عمران کو خدشہ ہے کہ اگلے انتخابات میں ‘پی ٹی آئی مخالف پوسٹوں’ کے لیے دھاندلی کی جائے گی

انہوں نے دلیل دی کہ اتحاد کے پاس غیر ملکی دوروں، حکومتی پروپیگنڈے اور 85 وزراء کی فوج کے لیے فنڈز ہیں لیکن ان انتخابات کے لیے نہیں جو ملک کی تقدیر کا فیصلہ کریں گے۔

"سیکورٹی کے لیے بھی ایسا ہی ہے۔ حکومت کے پاس پی ڈی ایم رہنماؤں کو سیکورٹی فراہم کرنے کے لیے کافی وسائل ہیں، لیکن وہ الیکشن کے دن سیکورٹی فراہم نہیں کر سکتی،” انہوں نے کہا۔

حبیب کے مطابق ان خطوط کے بعد ہمارے خدشات درست ثابت ہوئے کہ کچھ قوتیں الیکشن روکنا چاہتی ہیں اور کسی نے ای سی پی کو الیکشن کی تاریخ دینے سے روک دیا۔’آئین میں واضح لکھا ہے کہ ملک کے تمام اداروں کو ای سی پی کی حمایت کرنی چاہیے’۔ اس نے شامل کیا.

پی ٹی آئی کے رہنماؤں نے کہا کہ 10 ماہ قبل ایک سازش کے تحت ان کی حکومت کا تختہ الٹ دیا گیا، سابق آرمی چیف آف اسٹاف (ر) قمر جاوید باجوہ پر ملک پر چوروں کا ٹولہ مسلط کرنے کا الزام۔ انہوں نے زور دے کر کہا کہ یہ گروہ انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں میں ملوث ہے اور آئین کی توہین کرتا ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ اگر پارلیمنٹ اپنی مدت سے پہلے تحلیل ہو جاتی ہے تو 90 دن کے اندر انتخابات کرائے جائیں اس لیے انتخابات میں تاخیر کی آئین میں کوئی گنجائش نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ آئین کا راستہ اختیار کرتے ہوئے عمران نے بلدیاتی کونسلیں تحلیل کر دیں لیکن یہ حکومت پھر بھی انتخابات نہ کرانے پر بضد رہی۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

تازہ ترین
ملک سے اضافی چینی کی برآمد کیلئے راہ ہموار ہونے لگی پی ایس ایکس میں مسلسل دوسرے روز کاروبار کا منفی رجحان نان فائلرز کی موبائل سمز بلاک کرنے کے مثبت اثرات، 7167 نے ٹیکس گوشوارے جمع کرا دیے، ذرائع خسرہ کی بڑھتی وبا، محکمہ صحت پنجاب نے الرٹ جاری کردیا خسرے سے 6 بچوں کی اموات، ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کی ٹیم کا متاثرہ علاقے کا دورہ ایل پی جی کی قیمت میں نمایاں کمی سونا آج 2400 روپے مہنگا ہو کر فی تولہ کتنے کا ہو گیا؟ ملک میں مہنگائی میں کمی ہو رہی ہے، رپورٹ وزارت خزانہ ملک میں 3 ہزار ڈبہ پیٹرول پمپ اسٹیشن چل رہے ہیں، چیئرمین اوگرا مرغی کا گوشت مہنگا ہوکر 431 روپے کلو ہو گیا شوگر ایڈوائزری بورڈ کا اہم اجلاس کل لاہور میں طلب پلان کوآرڈینیشن کمیٹی کا اجلاس 31 مئی کو طلب کبیر والا میں خسرہ سے 6 بچے جاں بحق ہوئے: وزیر صحت پنجاب سونے کی فی تولہ قیمت 500 روپے کم ہوگئی تھیلیسمیا و ہیموفیلیا کے پھیلاؤ کی ذمے دار ہماری اپنی غلطیاں ہیں: وزیرِ صحت سندھ