بلاول نے آئی ایم ایف سے ٹارگٹڈ سبسڈی مانگ لی

36

کراچی:

وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری نے بدھ کو بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) سمیت بین الاقوامی اداروں سے ٹارگٹڈ سبسڈیز کا مطالبہ کیا اور آئی ایم ایف اور وزیر خزانہ اسحاق ڈار کے درمیان کامیاب ملاقات کی امید ظاہر کی۔

پاکستان اور آئی ایم ایف 9ویں پروگرام کے جائزے کو مکمل کرنے کے لیے بات چیت کر رہے ہیں، جس کی کامیابی سے 1.1 بلین ڈالر کے قرضے کی قسط کو کھولا جا سکتا ہے۔

جب تک IMF معاہدے کا اعلان نہیں کیا گیا، کسی دوسرے کثیر جہتی اور دو طرفہ قرض دہندگان نے پاکستان کو بڑے نئے قرضے دینے کا انتخاب نہیں کیا۔

پڑھیں بلاول معاشی بحران سے بچنے کے لیے منصوبہ چاہتے ہیں۔

وزیر اعظم شہباز شریف نے پیر کو بجلی کی قیمتوں میں اضافے کی منظوری دے دی، عالمی ساہوکاروں کے ساتھ اختلافات ختم ہونے میں صرف چند دن باقی رہ گئے ہیں۔

بظاہر یہ فیصلہ آئی ایم ایف کے اپنے سابقہ ​​موقف سے پیچھے نہیں ہٹنے کے بعد آیا ہے کہ پاکستان کو اپنے ماضی کے وعدوں کو پورا کرنا چاہیے۔

تاہم، شکوک و شبہات برقرار ہیں کہ پاکستان کثیر جہتی اور تجارتی قرض دہندگان سے 5 بلین ڈالر کے قرض سے محروم ہوسکتا ہے کیونکہ اسلام آباد اقتصادی اور مالیاتی پالیسی (MEFP) سے متعلق ایک مسودہ یادداشت کا انتظار کر رہا ہے۔ موجودہ سال کے بقیہ حصے کے لیے بیرونی شعبے کے اہداف اور آنے والے سال کے لیے تخمینے۔

پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے چیئرمین بلاول نے کراچی میں سندھ ڈونر کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے آئی ایم ایف پر زور دیا کہ وہ "سیلاب اور مہنگائی میں ڈوبنے والوں کی مدد اور دیکھ بھال کرے۔”

انہوں نے کہا کہ سیلاب سے متاثر ہونے والوں کے لیے خاص طور پر زراعت، توانائی اور بنیادی سہولیات کے لیے ہدفی امداد انتہائی اہم ہے اور "تبھی ممکن ہو گا جب آئی ایم ایف صورت حال کو کم کرے۔”

انہوں نے جنیوا کانفرنس میں پاکستان کی کامیاب سفارت کاری کا سہرا سیلاب سے متاثرہ لوگوں کے لیے فنڈز کے حصول کے لیے دیا، لیکن اس بات پر بھی زور دیا کہ گھروں کی تعمیر کے لیے 1.5 بلین ڈالر کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ "اس میں سے ورلڈ بینک نے 500 ملین ڈالر، سندھ حکومت نے مزید 250 ملین اور وزیر اعظم شہباز شریف نے مزید 250 ملین ڈالر کا تعاون کیا۔”

مزید پڑھ قدرتی وسائل کے استعمال سے ‘آئی ایم ایف کو الوداع کرنے میں مدد ملتی ہے’

سیلاب متاثرین کی تعمیر کے لیے فنڈنگ ​​کرتے ہوئے وزیر نے کہا کہ ہم نہ صرف مکانات تعمیر کر رہے ہیں بلکہ سیلاب متاثرین کو جائیداد کا مالک بھی بنا رہے ہیں۔

انہوں نے انکشاف کیا کہ وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی ہدایت کے مطابق ہر گھر کی خواتین کو گھر الاٹ کیے جائیں گے۔

واضح رہے کہ فنڈز ریلیز ہوتے ہی آٹھ اضلاع کو منتقل کر دیے گئے تھے۔

پہلی قسط 75,000 روپے ہے اور متاثرہ افراد اپنے بینک سے رقم نکال سکتے ہیں۔

اضلاع میں لاڑکانہ، سکھر، دادو، حیدرآباد، ٹھٹھہ، شاہد بینظیر آباد، عمرکوٹ اور ٹنڈواریہ شامل ہیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

تازہ ترین
ڈیڑھ لاکھ میٹرک ٹن چینی کی برآمد سے متعلق سمری پر اختلافات کی اندرونی کہانی سامنے آ گئی فی تولہ سونے کی قیمت 1400روپے کم ہوگئی سینیٹ کی قائمہ کمیٹی خزانہ نے فلاحی اسپتالوں پر سیلز ٹیکس کی حمایت کردی آئندہ مالی سال میں نیا پاکستان سرٹیفکیٹ کیلئے 60 کروڑ روپے مختص، وزارت خزانہ جناح اسپتال کی سینٹرل فارمیسی کی ادویات خراب ہونے لگیں پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں ہفتہ بھر میں 92 کروڑ شیئرز کا کاروبار ن لیگ، پی پی اپوزیشن میں تھیں تو پیٹرولیم لیوی کو بھتہ کہتی تھیں، اب اسے بڑھا رہی ہیں: فاروق ستار حکومت کا ساتویں قومی مالیاتی کمیشن ایوارڈ میں توسیع کا فیصلہ، ذرائع وزارت خزانہ سندھ انسٹیٹیوٹ آف چائلڈ ہیلتھ نے ہیومن ملک بینک کا منصوبہ روک دیا وزارتِ صنعت کا ہائبرڈ الیکٹرک گاڑیوں پر سیلز ٹیکس بڑھانے پر اعتراض 11 ماہ میں کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 3 اعشاریہ 3 ارب ڈالر کم ہوا بلوچستان کا 955 ارب روپے کا بجٹ پیش کردیا گیا ایشیائی بینک پاکستان کو 25 کروڑ ڈالر قرض دے گا پاکستان میں سیمنٹ کی بوری سب سے مہنگی کہاں؟ کینسر کے علاج میں جاپان کی ترقی کا فائدہ پاکستانیوں کو پہنچانے کی کوشش کررہے ہیں، ڈاکٹر علی فرحان