کوہستان میں بس کھائی میں گرنے سے 25 افراد جاں بحق

47

منگل کو صوبہ خیبرپختونخوا میں شاہراہ قراقرم پر اپر کوہستان کے ضلع حبان کے قریب ایک مسافر بس ایک لاوارث گاڑی سے ٹکرا گئی جس کے نتیجے میں کم از کم 25 افراد ہلاک ہو گئے۔

کے مطابق ایکسپریس نیوزحادثہ اس وقت پیش آیا جب گلگت سے راولپنڈی جانے والی بس ایک چھوٹی گاڑی سے ٹکرا گئی جس کے بعد دونوں گاڑیاں کھائی میں گر گئیں۔

حادثے کے بعد مقامی لوگوں نے امدادی کارکنوں کے ساتھ مل کر لاشوں اور زخمیوں کو بس سے نکال کر اسپتال منتقل کیا۔

کئی زخمی مسافروں کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے۔

عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ حادثہ ایک بس کی وجہ سے پیش آیا جو تیز رفتاری سے جا رہی تھی اور ڈرائیور کے کنٹرول سے محروم ہونے پر ایک چھوٹی گاڑی سے ٹکرا گئی۔

صدر مملکت عارف علوی اور وزیر اعظم شہباز شریف نے بس حادثے میں جانی نقصان پر دکھ کا اظہار کیا اور سوگوار خاندانوں سے اظہار تعزیت کیا۔

یہ بھی پڑھیں: کوہاٹ ٹنل کے قریب حادثے میں 17 افراد جاں بحق

وزیراعظم نے حکام کو ہدایت کی ہے کہ زخمیوں کو تمام دستیاب طبی سہولیات فراہم کی جائیں۔

گلگت بلتستان کے وزیراعظم خالد خورشید نے بھی بس حادثے پر دکھ کا اظہار کیا اور انتظامیہ اور تمام متعلقہ محکموں کو ہدایت کی کہ زخمیوں کو نکالا جائے اور جہاں بھی ممکن ہو طبی سہولیات فراہم کی جائیں۔

وزیراعظم نے ایمرجنسی رسپانس کوآرڈینیشن اور مانیٹرنگ کو بڑھانے کے لیے خصوصی کنٹرول روم قائم کرنے کی بھی ہدایات جاری کیں۔ اس کے علاوہ وزیراعظم نے ضرورت پڑنے پر گلگت سے میڈیکل ٹیمیں روانہ کرنے کی ہدایت کی ہے۔

یہ حادثہ جنوبی بلوچستان کے ضلع رسویرا میں ایک بس کے کھائی میں گرنے اور آگ لگنے کے ایک ہفتے بعد پیش آیا ہے، جس میں 41 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔ بس، جس میں تقریباً 48 افراد سوار تھے، کوئٹہ سے کراچی جاتے ہوئے پل کی چوکی سے ٹکرا گئی اور راستے سے ہٹ گئی۔

3 فروری کو کوہاٹ ٹنل ٹول اسٹیشن کے قریب انڈس ہائی وے پر وین اور ٹرک کے درمیان تصادم میں 17 افراد جاں بحق ہوگئے۔ لکی موات سے پشاور جاتے ہوئے مال گاڑی کو ٹرک نے ٹکر مار دی۔ مخالف سمت سے.

دسمبر میں انڈس ہائی وے پر ایک اور ٹریفک حادثہ اس وقت پیش آیا جب راجن پور کے قریب ایک ریڑھی پتھر سے بھری ٹریکٹر ٹرالی اور دوسری گاڑی سے ٹکرا گئی۔

پاکستان میں ٹریفک کی ہلاکتیں عام ہیں، جہاں ٹریفک قوانین پر شاذ و نادر ہی عمل کیا جاتا ہے اور بہت سے دیہی علاقوں میں سڑکوں کی حالت ابتر ہے۔

گزشتہ جون میں بلوچستان میں ایک کار گہری کھائی میں گرنے سے ایک ہی خاندان کے نو افراد سمیت کم از کم 22 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

تازہ ترین