علوی کا دعویٰ ہے کہ اس نے پشاور کے تباہ کن دھماکے میں فاسفورس کا استعمال کیا تھا۔

3

پشاور:

صدر مملکت عارف علوی نے دعویٰ کیا ہے کہ گزشتہ ماہ پشاور میں مسجد کو نشانہ بنانے والے مہلک خودکش بم دھماکے میں فاسفورس خطرناک کیمیکل استعمال کیا گیا تھا۔

منگل کو صوبہ خیبرپختونخوا کے دارالحکومت کے ایک روزہ دورے کے دوران صدر علوی نے دہشت گرد حملے میں جانی نقصان پر افسوس کا اظہار کیا اور حکومت اور فوج کے تعاون سے دہشت گردی کے خاتمے کے عزم کا اظہار کیا۔

صدر مملکت نے ان خیالات کا اظہار وزیراعلیٰ ہاؤس میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ عبوری وزیراعظم اعظم خان اور وزیر مملکت سعید مسعود شاہ بھی موجود تھے۔

صدر نے بم دھماکے میں زخمی ہونے والوں کی عیادت کے لیے لیڈی ریڈنگ اسپتال کا دورہ کیا اور متاثرین کے اہل خانہ سے یکجہتی کا اظہار کیا۔میں نے حکومت کی جانب سے متاثرین کے لواحقین کو معاوضے کی فراہمی کے اعلان کو سراہا۔

حالیہ نتائج سے پتہ چلتا ہے کہ خودکش بمباروں نے اپنے دھماکوں میں ٹرائینیٹروٹولیوین (TNT) کا استعمال کیا، اور واقعے کی واضح تصویر فراہم کرنے کے لیے بمبار کی باقیات کے ڈی این اے شواہد کو نمونوں سے ملایا گیا۔ کالعدم پاکستان کے تلیکو-ای طالبان (ٹی ٹی پی) نے اس کی ذمہ داری قبول کی ہے جسے ملک کے سالوں میں بدترین دہشت گردانہ حملہ سمجھا جاتا ہے۔

صدر نے دہشت گرد حملے میں معصوم جانوں کے ضیاع پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ "فاسفورس بہت نقصان دہ ہے اور اس کی صدمے کی لہر بہت زیادہ ہے، فاسفورس کو دھماکہ خیز آلات میں استعمال کیا جاتا تھا”۔

یہ بھی پڑھیں: پشاور حملہ آور کے سر کا ڈی این اے، جسم کے بال مل گئے

صدر نے کہا کہ ملک اور سیکورٹی فورسز نے ماضی میں دہشت گردی کا بے مثال مقابلہ کیا ہے لیکن وہ مل کر دوبارہ اس خطرے کا مقابلہ کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ انہیں امداد اور امدادی سرگرمیوں میں مداخلت سے بچنے کے لیے دورے کا انتظار کرنا پڑا۔

علوی نے کہا کہ ملک شہداء کے اہل خانہ کے ساتھ کھڑا ہے اور زخمیوں کی جلد صحت یابی کے لیے دعا گو ہے۔

انہوں نے حکومت کی جانب سے ہر شہید کے ورثا کے لیے 20 لاکھ روپے اور ہر زخمی کے لیے 50 لاکھ روپے دینے کے اعلان کو بھی سراہا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

تازہ ترین