پی بی سی نے ‘ٹیکس دہندگان’ کی رقم سے مشرف کی لاش وطن واپس لانے کے خلاف

4

اسلام آباد:

وکلا کی سپریم باڈی پاکستان بار ایسوسی ایشن (پی بی سی) کے ایک سینئر رکن نے پیر کو سابق فوجی حکمران جنرل پرویز مشرف (ر) کی باقیات کی وطن واپسی کے لیے خصوصی پروٹوکول کی فراہمی پر شدید تحفظات کا اظہار کیا۔

پی بی سی کے چیئرمین حسن رضا پاشا اور وائس چیئرمین ہارون الرشید نے پرویز مشرف کے انتقال پر تعزیت کا اظہار کیا تاہم سابق آرمی چیف کی میت کی وطن واپسی پاکستانی ٹیکس دہندگان کے خرچے پر متحدہ عرب امارات کے لیے ایک خصوصی تحفہ ہے۔ "سرکاری خزانے کے لیے نقصان، خاص طور پر موجودہ معاشی ماحول میں، جس کا دعویٰ اس نے طیارہ بھیج کر کیا تھا۔

پی بی سی کے بیان میں کہا گیا ہے کہ مشرف نے "اکتوبر 1999 کی بغاوت کے بعد اقتدار سے علیحدگی اختیار کی اور 1973 میں پاکستانی آئین کو ختم کر دیا، جب کہ 2008 تک سابق آرمی چیف اور پھر پاکستانی صدر کے طور پر پاکستان پر حکومت کی۔ میں نے سنگین غداری کا جرم کیا ہے۔” آئین کا آرٹیکل 6۔”

پڑھیں سپریم کورٹ نے مشرف کی سزا کے خلاف درخواست میں کبھی ترمیم نہیں کی۔

انہوں نے 12 اکتوبر 1999 اور 3 نومبر 2007 کو دو بار آئین کو الٹ دیا اور ایمرجنسی نافذ کرکے اسے معطل کر دیا۔

ان کا کہنا تھا کہ خصوصی عدالت نے انہیں آئین کے آرٹیکل 6 کے تحت سنگین غداری کے مقدمے میں موت کی سزا سنائی تھی۔

"وہ تھا [an] اسے ایک سزا یافتہ شخص کے طور پر سرکاری پروٹوکول نہیں دیا جانا چاہئے جو پاکستانی عدالت سے فرار ہو گیا تھا،” بیان میں کہا گیا ہے۔

اس نے مزید کہا کہ پی بی سی نے "دائر کیا” [an] سنگین غداری کیس میں پرویز مشرف کے خلاف اپیل زیر سماعت ہے۔ [the] معزز سپریم کورٹ”۔

کونسل نے پرویز مشرف کے خلاف سنگین غداری کیس میں تاریخی فیصلے پر پشاور ہائی کورٹ (پی ایچ سی) کے سابق چیف جسٹس وقار احمد سیٹھ کو بھی اعزاز سے نوازا۔

بیان میں کہا گیا، "پاکستان لائرز کونسل اور قانونی برادری نے ہمیشہ غاصبوں کے غیر آئینی اقدام کی مزاحمت کی ہے۔”

"کا ادارہ [the] پاکستانی عوام کے لیے فوج بہت اہم ہے۔ [the] مادر وطن کے محافظ اور ذیل میں بیان کردہ فرائض اور افعال کو انجام دینا چاہیے۔ [the] یہ پاکستان کا آئین ہے اور اس کے حلف کی خلاف ورزی نہیں کی جائے گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ وکلا برادری پاکستان میں آئین، عدالتی آزادی اور قانون کی حکمرانی کے دفاع کے لیے پرعزم ہے۔

مشرف، جو 2016 سے دبئی میں مقیم تھے، اتوار کو 79 سال کی عمر میں انتقال کر گئے۔

ان کے اہل خانہ کے مطابق، سابق صدر اور سیکرٹری جنگ امائلائیڈوسس کا شکار تھے، یہ ایک نایاب بیماری ہے جو کہ پورے جسم کے اعضاء اور بافتوں میں امائلائیڈ نامی غیر معمولی پروٹین کی تشکیل کی وجہ سے ہوتی ہے۔

امائلائیڈ پروٹین (ذخائر) کا جمع ہونا اعضاء اور بافتوں کے لیے مناسب طریقے سے کام کرنا مشکل بنا دیتا ہے۔

ذرائع نے بتایا کہ چارٹر طیارہ پیر کو اپنے اہل خانہ کے ساتھ دبئی سے اسلام آباد پہنچنا تھا تاکہ میت کو وطن لے جایا جا سکے۔

لیکن پاکستانی فضائیہ کے ایک ذریعے نے اے ایف پی کو بتایا کہ پرویز مشرف کی میت نجی مسافر بردار جہاز یا متحدہ عرب امارات کی فضائیہ کے جیٹ کے ذریعے پاکستان واپس لائی جائے گی۔

اے پی ایم ایل کے انٹیلی جنس ڈائریکٹر طاہر حسین نے کہا کہ ان کے اہل خانہ نے تصدیق کی ہے کہ پرویز مشرف کی میت پیر کو خصوصی طیارے کے ذریعے کراچی پہنچائی جائے گی۔

مشرف نے 1999 میں ایک خونخوار بغاوت کے ذریعے اقتدار پر قبضہ کیا تھا اور جب امریکہ پر 9/11 کے حملے ہوئے تھے تو وہ بیک وقت پاکستان کے آرمی سیکرٹری، چیف ایگزیکٹو آفیسر اور صدر کے طور پر خدمات انجام دے رہے تھے۔

جنرل دو بار ملک کے آئین کو معطل کر چکے ہیں اور ان پر اپنے اقتدار کو مستحکم کرنے کے لیے ریفرنڈم میں دھاندلی کا الزام لگایا گیا ہے۔

اس کے باوجود وہ پڑوسی ملک افغانستان پر حملے کے دوران واشنگٹن کا اہم علاقائی اتحادی بن گیا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

تازہ ترین
فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ، بجلی قیمت میں 3 روپے 41 پیسے اضافے کی درخواست سونے کی فی تولہ قیمت میں 200 روپے کی کمی کراچی میں عید الاضحی سے قبل سبزیوں کی قیمتوں میں اضافہ مقامی طور پر تیار بچوں کے دودھ پر 18 فیصد سیلز ٹیکس لگانے کی تجویز پر غور کون زیادہ گوشت کھاتا ہے! مرد یا خواتین؟ پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں اس مرتبہ کاروباری ہفتہ ریکارڈ ساز رہا ٹی ڈیپ کی زیر سرپرستی 11 پاکستانی کمپنیوں کے وفد کا دورہ ہیوسٹن، تجارتی معاملات پر گفتگو نیپرا نے بجلی کے بنیادی ٹیرف میں 5.72 روپے فی یونٹ اضافے کی منظوری دے دی پیٹرول کی قیمت میں بڑی کمی کردی گئی پاکستان شیئر بازار نے 77 ہزار کی حد عبور کرلی کریڈٹ یا ڈیبٹ کارڈ قبول نہ کرنیوالے دکاندار کا کاروبار سِیل ہو گا: ایف بی آر ڈیفالٹ سے دوچار کمپنیوں کیلئے ریگولرائزیشن اسکیم متعارف سونے کی فی تولہ قیمت میں 800 روپے کا اضافہ وزیر اعلیٰ مراد علی شاہ سندھ کا بجٹ پیش کررہے ہیں بجٹ تقریر میں غربت سے نمٹنے کی کوئی بات نہیں کی گئی: رضا ربانی