عالمی رہنماؤں پر زور دیا کہ وہ کشمیر پر بھارت کے مظالم کے خاتمے میں مدد کریں۔

2

مظفرآباد:

آزاد جموں و کشمیر (اے جے کے) کے صدر سردار مسعود خان نے عالمی برادری اور اقوام متحدہ کو قابض افواج کی طرف سے بھارت کے زیر قبضہ جموں و کشمیر (IOJ&K) کے عوام کے خلاف انتہائی "ظالمانہ، غیر انسانی اور ذلت آمیز طرز عمل” کی مذمت کی ہے۔ میں نے "نقصان دہ” علاج کو ختم کرنے کے لیے مدد مانگی۔

"میں اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل انتونیو گوٹیرس کے اس بیان سے پوری طرح متفق ہوں کہ تشدد کرنے والوں کو کبھی بھی ان کے جرائم سے بری نہیں ہونے دیا جانا چاہئے اور تشدد کے قابل بنانے والے نظام کو ختم یا تبدیل کیا جانا چاہئے۔” جمعہ کو دنیا بھر میں تشدد کے متاثرین کا مشاہدہ کیا گیا۔

آزاد جموں و کشمیر کے صدر نے کہا کہ تشدد انسانیت کے خلاف جرم ہے اور بین الاقوامی قانون اور تمام مذاہب میں اس کی ممانعت ہے۔ یہ ہر روز ہو رہا ہے۔

انہوں نے اقوام متحدہ سے اپیل کی کہ وہ تشدد کو عام یا غیر واضح نہ کرے جہاں یہ مقامی ہے۔ انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں تشدد سب سے زیادہ اور بدترین ہے۔

"بی جے پی-آر ایس ایس کی حکومت نے 14 ملین لوگوں کی مرضی کے خلاف جموں اور کاظمیر پر دوبارہ قبضہ کیا اور نوآبادیاتی بنایا، صوبوں کو دو حصوں میں تقسیم کیا، اور پورے علاقے کو غیر ملکی دارالحکومت دہلی کے تحت رکھنے کا حکم نامہ نافذ کیا، تشدد کیا گیا۔”

مودی حکومت کی مذمت کرتے ہوئے، صدر مسعود نے کہا، "جیسا کہ ہم آج اس دن کو منا رہے ہیں، کشمیری نوجوانوں کو جعلی مقابلوں میں شکار کیا جاتا ہے، سرد خون میں مارا جاتا ہے، مظاہرین کو اندھا کیا جاتا ہے اور جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔” گالی کو جنگ کے ہتھیار کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ نئے سیٹلمنٹ رولز کے تحت بھارت بھر سے ہندوؤں کو لا کر مقبوضہ علاقوں میں آباد کر کے کشمیریوں کو بے گھر کیا جا رہا ہے۔

"محروم کشمیریوں کو ان کے روزگار، ذریعہ معاش، کاروبار اور زمین سے محروم کیا جا رہا ہے۔ نظامی طور پر، متنازعہ وادی کی آبادی ہمیشہ کے لیے بدل رہی ہے۔”

وزیر اعظم نے بین الاقوامی برادری پر زور دیا کہ وہ IOJ&K میں ہونے والے مظالم کے لیے بھارت کو جوابدہ بنائے

آزاد جموں و کشمیر کے صدر نے کہا کہ بھارت مقبوضہ علاقوں میں جو کچھ کر رہا ہے وہ چوتھے جنیوا کنونشن، آئی سی سی کے آئین اور بین الاقوامی انسانی قانون کے تحت جنگی جرم ہے۔

سیاسی رہنماؤں اور سیاسی کارکنوں کی من مانی گرفتاریوں کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہزاروں غیر قانونی طور پر قید سیاسی قیدیوں کو وحشیانہ تشدد کا نشانہ بنایا جاتا ہے جو اکثر موت یا معذوری کا باعث بنتے ہیں۔

صدر مسعود نے بھارت کی تہاڑ جیل سے سیاسی قیدیوں جیسے یاسین ملک، آسیہ اندرابی اور شبیر شاہ کو فوری طور پر رہا کر دیا، اور سعید علی جیلانی، جو سینکڑوں کی تعداد میں تنگ جیلوں میں بند ہیں، اور دیگر حریت رہنماؤں کو رہا کر دیا۔

تقریباً 13,000 لڑکے اور 10 سال کے بچے حراستی کیمپوں میں پھنسے ہوئے ہیں، جہاں ان پر تشدد کیا جاتا ہے اور ان کی برین واشنگ کی جاتی ہے، انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ کی قیادت میں عالمی برادری ان کی رہائی میں کلیدی کردار ادا کرے گی۔میں نے فون کیا۔

انہوں نے بھارت سے ان تمام سخت قوانین کو ختم کرنے کا بھی مطالبہ کیا جو قابض افواج کو بغیر کسی جرم کے جرائم کرنے کا اختیار دیتے ہیں۔

"کشمیری زمین کے شہری ہیں، ان کی ایس او ایس کی چیخیں سنیں، ان کے جسموں کو بچائیں، ان کی روحوں کو بچائیں، آپ کی آنکھوں کے سامنے اتنا بڑا تشدد کیا جا رہا ہے۔” جب آپ وہاں ہوتے ہیں تو خاموش رہنا بھی جرم ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

تازہ ترین
فروری کے آخری کاروباری روز مثبت رجحان، انڈیکس 875 پوائنٹس بڑھ گیا وزارت خزانہ نے ماہانہ اکنامک اپ ڈیٹ آؤٹ لک رپورٹ جاری کردی سونے کی قیمت میں آج کتنا اضافہ ہوا؟ وزیراعلیٰ پنجاب مریم نواز کی ہدایت پر میواسپتال کی ایمرجنسی میں نئے اسٹریچر اور بیڈز پہنچ گئے معاشی ماہرین کا پی ٹی آئی کے آئی ایم ایف کو خط پر ردِعمل پی ایم ڈی سی نے عام ڈاکٹروں کو ایستھیٹک میڈیسن کی پریکٹس سے روک دیا سونے کی فی تولہ قیمت میں 1100 روپے کی کمی 100 انڈیکس الیکشن کے بعد بلند ترین سطح پر بند چین نے پاکستان کا 2 ارب ڈالر کا قرض رول اوور کردیا نہار منہ ہلدی کا پانی پینے کے صحت پر 10 حیران کُن فوائد پاکستان میں 8 فروری کو انتہائی متنازع انتخابات کے باعث سیاسی خطرات بلند ہیں، موڈیز حکومت نیپرا کے غلط فیصلوں کا نوٹس لے، صدر کے سی سی آئی افتخار شیخ کاروبار کا ملا جلا دن، 100 انڈیکس میں 86 پوائنٹس کی کمی سونے کی فی تولہ قیمت میں 100 روپے کا اضافہ حکومت نے رواں مالی سال 16 فروری تک بینکنگ شعبے سے کتنا قرض لیا؟