کوہاٹ کشتی حادثے میں جاں بحق افراد کی تعداد 52 ہوگئی

2

فوج کے میڈیا ونگ نے جمعہ کو بتایا کہ کوہاٹ کے ٹانڈہ ڈیم میں کشتی الٹنے سے جاں بحق ہونے والے طلباء کی تعداد 52 ہو گئی ہے۔

انٹر سروسز پبلک ریلیشنز (آئی ایس پی آر) نے ایک بیان میں کہا، "آرمی چیف آف سٹاف کے حکم سے، پاکستان آرمی ایس ایس جی اور کور آف انجینئرز کے یونٹوں نے آخری لاپتہ طالب علم کی لاش تلاش کر لی ہے۔”

آئی ایس پی آر نے کہا کہ فوجی غوطہ خوروں کو آخری لاپتہ لاش ملنے سے قبل آپریشن 48 گھنٹے جاری رہا۔

اس نے مزید کہا، "ڈوبنے والے تمام 52 طلباء اور عملے کو مل گیا ہے۔”

کوہاٹ میں ٹانڈہ ڈیم میں کشتی الٹنے سے مدرسے کے طلباء سمیت درجنوں افراد جاں بحق

آئی ایس پی آر کا مزید کہنا تھا کہ ایس ایس جی، آرمی انجینئرز اور ریسکیو 1122 کی آرمی ڈائیونگ ٹیم نے ٹانڈہ ڈیم سے پانچ طالب علموں کو زندہ نکال لیا۔

یہ واقعہ اتوار کو اس وقت پیش آیا جب مدرسے کے طلباء کو لے جانے والا مسافر جہاز ڈیم پر الٹ گیا۔

میر بادشاہ کیل گاؤں کے مدرسے کے درجنوں طلباء مبینہ طور پر پکنک کے لیے ڈیم پر آئے تھے، میں کامیاب ہو گیا۔ تاہم، اوور لوڈ شدہ کشتی دوسری بار ڈیم کے آدھے راستے پر الٹ گئی۔

کوہاٹ کے ڈپٹی کمشنر محمود اسلم نے کہا کہ حکام کی جانب سے ڈیم کی مہم جوئی کو تفریحی سفر کے لیے بند کر دیا گیا ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

تازہ ترین