ریلوے چین کی مدد سے RABTA ایپ لانچ کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔

13

لاہور:

پاکستان ریلویز نے پیر کو دو چینی کمپنیوں میسرز ایزی وے اور میسرز نورینکو انٹرنیشنل کوآپریشن کے ساتھ ریلوے آٹومیٹڈ بکنگ اینڈ ٹریول اسسٹنس (RABTA) کے آغاز کے لیے معاہدے پر دستخط کیے ہیں۔

ریلوے ہیڈ کوارٹر میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ یہ اقدام سیکٹر کے لیے جیت کی صورتحال ہے۔ انہوں نے کہا کہ میسرز ایزی وے کمپنی اور میسرز نورینکو کا مشترکہ منصوبہ ہے۔

رفیق نے کہا کہ اس اقدام سے مسافروں کو گھر سے اپنے سفر کی منصوبہ بندی کرنے میں مدد ملے گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ ایپلیکیشن مسافروں کو ٹکٹوں، سیٹوں، ریزرویشنز، کھانے، ہوٹلوں اور ٹیکسی سے متعلق مسائل کا انتظام کرنے میں مدد کرے گی۔

انہوں نے مزید کہا، "یہ آئی ٹی پر مبنی حل نہ صرف مسافروں کی سہولت کے لیے ہے، بلکہ ٹکٹنگ کے ذریعے حاصل ہونے والی ریل آمدنی کے ریکارڈ کو برقرار رکھنے کے لیے بھی ہے۔”

وزیر نے کہا کہ ایپلی کیشن کے تحت پارسل بکنگ اور ٹریکنگ کے فنکشن دستیاب ہوں گے جبکہ مسافروں کو ٹرین کے ٹریفک مینجمنٹ سسٹم تک بھی رسائی حاصل ہوگی۔

رفیق نے کہا کہ یہ اقدام آمدنی کے اشتراک پر مبنی ہے۔ انہوں نے RABTA کو ریل آپریشنز کو جدید بنانے میں ایک اہم قدم قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ ٹرینیں جلد ہی سبی-ہرنائی سیکشن پر چلیں گی، جس سے وہاں کے چار اضلاع کی معیشت پر مثبت اثر پڑے گا۔

انہوں نے کہا کہ گوادر میں ریلوے کا سب آفس کھول دیا گیا ہے، انہوں نے مزید کہا کہ ریلوے کے بغیر بندرگاہ موثر طریقے سے کام نہیں کرے گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ پنشن اور تنخواہوں میں تاخیر کو کم کرنے یا اس پر قابو پانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

رفیق نے کہا کہ ریلوے کی بھٹی اپریل تک فعال ہو جائے گی۔

جہاں تک ریلوے کی دکانوں کا تعلق ہے، انہوں نے کہا کہ اس سلسلے میں پالیسیاں تیار کی گئی ہیں، انہوں نے مزید کہا: "آمدنی کمانے کے علاوہ، انہیں روزگار کے مواقع بھی فراہم کرنا ہوں گے۔”

انہوں نے مزید کہا کہ ٹرینوں کا بھی جائزہ لیا جا رہا ہے کیونکہ انہیں اپ گریڈ کی ضرورت ہے۔

مین لائن 1 پر، وزیر نے کہا کہ پروجیکٹ میں لاگت میں 40 فیصد کمی ممکن ہوگی۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

تازہ ترین