IRNA کا کہنا ہے کہ ایران نے زیر زمین فضائی اڈے کا انکشاف کیا ہے۔

3

دبئی:

سرکاری IRNA نیوز ایجنسی نے بتایا کہ ایران نے منگل کو ایگل 44 نامی زیر زمین فضائی اڈے کی نقاب کشائی کی، جو اپنی نوعیت کا پہلا اور لڑاکا طیارے رکھنے کے لیے کافی بڑا ہے۔

IRNA نے کہا کہ Eagle 44 بیس لڑاکا طیاروں اور ڈرونز کو ذخیرہ کرنے اور چلانے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ رپورٹ میں اڈے کے مقام کی تفصیل نہیں بتائی گئی۔

IRNA نے کہا کہ یہ ملک کے سب سے اہم ہوائی اڈوں میں سے ایک ہے، جو طویل فاصلے تک مار کرنے والے کروز میزائلوں سے لیس جنگجوؤں کے لیے گہرے زیر زمین بنایا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: ترکی-شام کا زلزلہ: امدادی سرگرمیاں سست، ہلاکتوں کی تعداد 5000 کے قریب پہنچ گئی۔

مئی میں، ایرانی فوج نے ایک اور زیر زمین اڈے کی تفصیلات کا انکشاف کیا جس میں ڈرون موجود ہیں، کیونکہ ایران اپنے فوجی اثاثوں کو خطے میں اپنے قدیم دشمن اسرائیل کے ممکنہ فضائی حملوں سے بچانے کی کوشش کر رہا ہے۔

ایرانی ملٹری چیف آف اسٹاف محمد باقری نے سرکاری ٹیلی ویژن کو بتایا کہ "ایران پر اسرائیل سمیت کسی دشمن کی طرف سے حملہ، ایگل 44 سمیت متعدد فضائی اڈوں سے جواب دیا جائے گا۔”

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

تازہ ترین