پاکستان نے ارشد شریف کے قتل کی تحقیقات میں دبئی سے مدد مانگ لی

24

فیڈرل انویسٹی گیشن ایجنسی (ایف آئی اے) کے فیکٹ فائنڈنگ کمیشن نے اطلاع دی ہے کہ اس نے دبئی پولیس کو ایک خط بھیجا ہے جس میں مقتول صحافی ارشد شریف کے بارے میں معلومات مانگی گئی ہیں، جنہیں اکتوبر میں کینیا میں گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا تھا۔ ایکسپریس نیوز منگل کو.

49 سالہ صحافی اگست میں گرفتاری سے بچنے کے لیے ملک چھوڑ کر فرار ہو گئے تھے، جس میں غداری کے الزامات سمیت متعدد الزامات لگائے گئے تھے، جب انہوں نے پی ٹی آئی رہنما شہباز گل کے ساتھ ایک انٹرویو میں متنازعہ تبصرہ کیا تھا۔

اپنی جان کو لاحق خطرات کا دعویٰ کرتے ہوئے شریف اگست میں دبئی اور پھر کینیا چلے گئے۔

خط کے مطابق ایف آئی اے نے دبئی پولیس سے صحافیوں کے امارات میں قیام کے دوران ویزے، سفری دستاویزات اور سی سی ٹی وی فوٹیج سمیت دیگر تفصیلات فراہم کرنے کو کہا۔

کمیٹی نے یہ بھی سوال کیا کہ کیا شریف کو متحدہ عرب امارات کے حکام نے منسوخ کیا؟

ایف آئی اے نے شریف کے لیے سی ڈی آر (کال ڈیٹا ریکارڈ) کی بھی درخواست کی ہے۔ گلی کی خبریں سی ای او سلمان اقبال اور طارق وصی کے فون نمبر۔

متحدہ عرب امارات کے حکام سے 10 اگست سے 20 اگست کے درمیان پاکستانی پاسپورٹ رکھنے والوں کی آمد اور روانگی کی تفصیلات فراہم کرنے کو بھی کہا گیا تھا۔

ایف آئی اے نے ان الزامات کے بارے میں بھی معلومات طلب کیں جن میں کہا گیا تھا کہ ارشد شریف کو متحدہ عرب امارات کے اعلیٰ حکام نے ملک چھوڑنے کا کہا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: ثناء کا کہنا ہے کہ ارشد شریف ٹارگٹ حملے میں مارے گئے

رواں ماہ کے اوائل میں وزارت خارجہ نے ان خبروں کی سختی سے تردید کی تھی کہ پاکستانی حکام نے متحدہ عرب امارات کو خط لکھ کر ارشد شریف کی بے دخلی کا مطالبہ کیا تھا۔

ہفتہ وار میڈیا بریفنگ میں بات کرتے ہوئے، ایف او کے ترجمان عاصم افتخار نے "سوشل میڈیا پر غلط معلومات” کی تردید کی اور کہا کہ ایف او کے علم میں ایسا کوئی خط نہیں تھا۔

ترجمان نے کہا، "اس طرح کی رپورٹوں کو دیکھنے کے بعد، سوشل میڈیا پر بھی غلط معلومات پھیل گئیں، جس میں کچھ لوگوں کا خیال تھا کہ مبینہ طور پر وزیر خارجہ کے دستخط شدہ ایک خط تھا۔”

وزیر داخلہ رانا صنورا نے رواں ماہ کے اوائل میں کہا تھا کہ اس بات کے شواہد ملے ہیں کہ ایک نامور پاکستانی صحافی کینیا میں ٹارگٹ کلنگ کا نشانہ بنایا گیا تھا، تاہم انہیں اس کیس کے بارے میں مزید معلومات درکار ہیں۔

کینیا کی پولیس کے ترجمان برونو سیوسو نے ٹی وی صحافی ارشد شریف کی موت پر وزیر کے تبصرے کا جواب دینے سے انکار کر دیا، جنہیں 23 اکتوبر کی رات کینیا کے دارالحکومت نیروبی کے باہر گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا تھا۔

فائرنگ کے ایک دن بعد، پولیس رپورٹس میں کہا گیا ہے کہ کار چوروں کی تلاش میں مصروف پولیس اہلکاروں نے شریف کی کار پر اس وقت گولی چلا دی جب وہ رکے بغیر رکاوٹ سے گزرنے کی کوشش کر رہی تھی۔

سیوسو نے کہا کہ اس واقعے کی تحقیقات اب ریاست کے انڈیپنڈنٹ پولیس اوور سائیٹ آفس (آئی پی او اے) کے ذریعے کی جا رہی ہے، جو ایک پولیس واچ ڈاگ ہے۔ IPOA کے ترجمان نے فوری طور پر کالز یا پیغامات کا جواب نہیں دیا جس میں تبصرہ کرنے کی کوشش کی گئی۔

ثنا نے میڈیا کو بتایا کہ "ہم کہہ سکتے ہیں کہ ارشد شریف کی موت شناخت کی غلطی کی وجہ سے نہیں ہوئی، اب تک کے شواہد کی بنیاد پر، ابتدائی شواہد ٹارگٹ کلنگ کے ہیں۔”

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

تازہ ترین
ملک سے اضافی چینی کی برآمد کیلئے راہ ہموار ہونے لگی پی ایس ایکس میں مسلسل دوسرے روز کاروبار کا منفی رجحان نان فائلرز کی موبائل سمز بلاک کرنے کے مثبت اثرات، 7167 نے ٹیکس گوشوارے جمع کرا دیے، ذرائع خسرہ کی بڑھتی وبا، محکمہ صحت پنجاب نے الرٹ جاری کردیا خسرے سے 6 بچوں کی اموات، ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کی ٹیم کا متاثرہ علاقے کا دورہ ایل پی جی کی قیمت میں نمایاں کمی سونا آج 2400 روپے مہنگا ہو کر فی تولہ کتنے کا ہو گیا؟ ملک میں مہنگائی میں کمی ہو رہی ہے، رپورٹ وزارت خزانہ ملک میں 3 ہزار ڈبہ پیٹرول پمپ اسٹیشن چل رہے ہیں، چیئرمین اوگرا مرغی کا گوشت مہنگا ہوکر 431 روپے کلو ہو گیا شوگر ایڈوائزری بورڈ کا اہم اجلاس کل لاہور میں طلب پلان کوآرڈینیشن کمیٹی کا اجلاس 31 مئی کو طلب کبیر والا میں خسرہ سے 6 بچے جاں بحق ہوئے: وزیر صحت پنجاب سونے کی فی تولہ قیمت 500 روپے کم ہوگئی تھیلیسمیا و ہیموفیلیا کے پھیلاؤ کی ذمے دار ہماری اپنی غلطیاں ہیں: وزیرِ صحت سندھ