بھارتی پولیس نے کم عمری کی شادی کے خلاف کریک ڈاؤن کرتے ہوئے 1800 افراد کو گرفتار کر لیا۔

73

آسام میں پولیس نے کم عمر لڑکیوں سے شادی کرنے یا ان سے شادی کرنے کے الزام میں 1800 سے زیادہ مردوں کو گرفتار کیا ہے۔

ہمانتا بسوا سلمہ نے رائٹرز کو بتایا کہ پولیس نے جمعرات کی شب گرفتاریاں شروع کیں، جن میں مندروں اور مساجد میں اس طرح کی شادیوں کو رجسٹر کرنے میں مدد کرنے والے افراد سمیت گرفتاریوں کا زیادہ امکان ہے۔

انہوں نے کہا، "بچوں کی شادی بچوں کے حمل کی سب سے بڑی وجہ ہے، جو زچگی اور نوزائیدہ بچوں کی شرح اموات میں اضافہ کرتی ہے۔”

بھارت میں 18 سال سے کم عمر کی شادی غیر قانونی ہے، لیکن اس قانون کو صریحاً نظر انداز کیا جاتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: پینٹاگون کا کہنا ہے کہ چینی جاسوسی غبارہ امریکہ کے اوپر سے اڑ رہا ہے۔

اقوام متحدہ کا تخمینہ ہے کہ ملک میں تقریباً 223 ملین کم سن دلہنوں کا گھر ہے، جو دنیا میں سب سے زیادہ تعداد ہے۔ اقوام متحدہ کے بچوں کی امداد کے ادارے یونیسیف کی 2020 کی رپورٹ کے مطابق، وہاں ہر سال تقریباً 1.5 ملین کم عمر لڑکیوں کی شادی کر دی جاتی ہے۔

سلمیٰ نے کہا، "اس گھناؤنے سماجی جرم کے لیے تمام مذاہب اور برادریوں کے لوگ گرفتار کیے گئے ہیں، مسلمانوں سے لے کر ہندوؤں سے لے کر عیسائیوں تک، قبائلی لوگوں سے لے کر چائے کے باغات والے برادریوں سے تعلق رکھنے والے،”۔

انہوں نے مزید کہا کہ آسامی حکومت نے 4,004 لوگوں کے خلاف بچوں کی شادی سے متعلق مقدمات درج کیے ہیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

تازہ ترین
اسلام آباد و لورالائی کے ماحولیاتی نمونوں میں پولیو وائرس کی تصدیق عید پر مریضوں و لواحقین کو ناشتہ و کھانا دینگے: لاہور جنرل اسپتال انتظامیہ مویشی منڈی میں بشتر جانور بک گئے فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ، بجلی قیمت میں 3 روپے 41 پیسے اضافے کی درخواست سونے کی فی تولہ قیمت میں 200 روپے کی کمی کراچی میں عید الاضحی سے قبل سبزیوں کی قیمتوں میں اضافہ مقامی طور پر تیار بچوں کے دودھ پر 18 فیصد سیلز ٹیکس لگانے کی تجویز پر غور کون زیادہ گوشت کھاتا ہے! مرد یا خواتین؟ پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں اس مرتبہ کاروباری ہفتہ ریکارڈ ساز رہا ٹی ڈیپ کی زیر سرپرستی 11 پاکستانی کمپنیوں کے وفد کا دورہ ہیوسٹن، تجارتی معاملات پر گفتگو نیپرا نے بجلی کے بنیادی ٹیرف میں 5.72 روپے فی یونٹ اضافے کی منظوری دے دی پیٹرول کی قیمت میں بڑی کمی کردی گئی پاکستان شیئر بازار نے 77 ہزار کی حد عبور کرلی کریڈٹ یا ڈیبٹ کارڈ قبول نہ کرنیوالے دکاندار کا کاروبار سِیل ہو گا: ایف بی آر ڈیفالٹ سے دوچار کمپنیوں کیلئے ریگولرائزیشن اسکیم متعارف