امجد اسلام امجد کے اپنے الفاظ میں "وارث”

36

سال 1979 ہے۔ پی ٹی وی امجد اسلام امجد کی مقبول 13 اقساط پر مشتمل ڈرامہ سیریز کی پہلی قسط نشر کر رہے ہیں، وارثیہ شو جاگیرداری کے گرد گھومتا ہے اور چوہدری کی کہانی پر روشنی ڈالتا ہے، ایک جاگیردار خاندان جو سکندر پور گاؤں میں اپنا اثر و رسوخ برقرار رکھنے کے لیے سخت جدوجہد کرتا ہے۔ جو بہت سے لوگ نہیں جانتے تھے۔ وارث یہ امجد کے شاندار کیریئر میں سب سے زیادہ کیرئیر کی تعریف کرنے والے ڈراموں میں سے ایک ہوگا۔

اگرچہ اردو ادب اور پاپ کلچر میں ان کے وسیع کام کے لیے ہمیشہ یاد کیا جاتا ہے، وارث ہمیشہ ان کے دل کے قریب ایک پروجیکٹ رہا ہے۔کے ساتھ ایک انٹرویو میں ایکسپریس ٹریبیون ٹی میگزین پچھلے سال، امجد نے اپنے تنقیدی شو کے بارے میں بات کی۔

"میرا پہلا ٹی وی شو تھا۔ آرکوری کاذبٹیلی ویژن کی طرف سے نشر پی ٹی وی 1973 میں راولپنڈی سینٹر۔ ماں کی گری اور بالزخ سیریز کے حبہ کلی نم1974، کازومی ساحرہ کی ہدایت کاری میں۔ راحت کازومی نے ادا کیا۔

امجد نے مزید کہا، "پی ٹی وی لاہور سینٹر میں میرا پہلا ڈرامہ تھا۔ کب جگوتی ہین اس کا اعلان 23 مارچ 1975 کو ہوا، جس دن میری شادی ہوئی۔ اس ڈرامے نے مجھے میرا پہلا گریجویٹ ایوارڈ حاصل کیا۔ تب سے، میں نے 18 گریجویٹ ایوارڈز اور بہترین مصنف کے لیے 6 پی ٹی وی ایوارڈز جیتے ہیں۔ "

کے بارے میں بات وارثمشہور شاعر نے کہا کہ میری پہلی ٹی وی سیریز تھی۔ وارثاکتوبر 1979 سے فروری 1980 تک پی ٹی وی لاہور سینٹر نے شائع کیا۔ اسی ڈرامے نے مجھے بہت شہرت اور مقبولیت دلائی۔ یہ نہ صرف قومی ٹی وی چینلز پر دو بار نشر ہوا بلکہ اس کا چینی زبان میں ترجمہ بھی ہوا۔ "

امجد نے اس بارے میں کھل کر کہا کہ وارث نے اپنی زندگی سے متاثر کیا؟ اس نے کہا: یہ موضوع اس بات کا ثبوت ہے کہ مصنف کو جاگیردارانہ معاشرے میں رہنے کا کم از کم 20 سال کا تجربہ ہے۔ "

"میں شہری لاہور میں پیدا ہوا تھا اور جاگیرداری یا ثقافت سے میرا کبھی ذاتی یا خاندانی تعلق نہیں تھا۔ یہی وہ عوامل ہیں جو وارث، اور عوام نے تشکر کے ساتھ اس کا خیر مقدم کیا۔ "

وارث – متعلقہ آرٹ ورکس

ادبی شخصیت کی موت نے ان کے مداحوں کو صدمہ پہنچایا، بہت سے لوگوں نے امجد کی قابلیت کو یاد کرنے کے لیے سوشل میڈیا کا سہارا لیا۔ "مجھے امید ہے وارث یہ دوبارہ چلایا جائے گا، لہذا نوجوان نسل کو یہ دیکھنے کا موقع ملے گا کہ اس کے پاس کیا ٹیلنٹ تھا۔’ صارف نے شیئر کیا۔

ایک اور نے شیئر کیا، "وارث یہ اب تک کے سب سے بڑے ڈراموں میں سے ایک تھا۔ جاگیرداری اور اقربا پروری کی ایک حیرت انگیز کہانی جو شہری کاری اور جدیدیت کے خلاف مزاحمت کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔ ردعمل اب بھی گونج رہا ہے۔ امجد صاحب سکون سے رہیں اور پاکستان کو ایک بہتر جگہ بنانے کے لیے آپ کا شکریہ۔ "

ایک اور نے ٹویٹ کیا، "مجھے ابھی معلوم ہوا کہ شاعر اور ڈرامہ نگار امجد اسلام امجد انتقال کر گئے ہیں، میں نے ان کی شاعری نہیں پڑھی، لیکن میں نے ان کا ڈرامہ وارث پڑھا ہے، خاص طور پر میرا چنگیز خان کا ناول، مجھے چوہدری حشمت کا کردار بہت شوق سے یاد ہے۔ مجھے متاثر کیا اور چار درویشوں جیسا یادگار کردار تخلیق کرنے پر امجد کا شکریہ ادا کیا۔

ایک اور نے کہا: "امجد اسلام امجد کے انتقال کا سن کر بہت دکھ ہوا، انہیں ایک شریف آدمی، ایک شاعر اور ایک شاندار ٹیلی ویژن ڈرامے کے مصنف کے طور پر یاد رکھا جائے گا۔ ایک زمانے میں جب ‘ولیتھ’ ٹیلی ویژن پر دکھایا جاتا تھا۔ راستے صاف تھے، روح کو سکون ملے۔”

کیا آپ کے پاس کہانی میں شامل کرنے کے لیے کچھ ہے؟ براہ کرم نیچے دیئے گئے تبصروں میں اشتراک کریں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

تازہ ترین
لندن ایونٹ ایک سیاسی جماعت کی جانب سے منعقد کیا گیا، ترجمان دفتر خارجہ سیاسی تشویش مثبت رجحان کو منفی کر گئی، 100 انڈیکس 927 پوائنٹس گر گیا سونے کی فی تولہ قیمت میں 2 ہزار 300 روپے کی بڑی کمی ہر 20 منٹ میں ہیپاٹائیٹس سے ایک شہری جاں بحق ہوتا ہے: ماہرین امراض آپ کو اپنی عمر کے حساب سے کتنا سونا چاہیے؟ 7 ارب ڈالر کے بیل آؤٹ پیکج کی منظوری، آئی ایم ایف ایگزیکٹو بورڈ کا اجلاس اگست میں بلائے جانے کا ام... چیونگم کو نگلنا خطرناک اور غیر معمولی طبی مسائل کا سبب بن سکتا ہے، ماہرین کاروبار کا مثبت دن، 100 انڈیکس میں 409 پوائنٹس کا اضافہ سونے کی فی تولہ قیمت میں 2300 روپے کا اضافہ ہوگیا ملکی معیشت کی مضبوطی کیلئے خسارے والے اداروں کی نجکاری کر رہے ہیں، علیم خان بھارتی خاتون کو جسم میں سرجیکل سوئی رہ جانے کا معاوضہ 20 سال بعد مل گیا سونا فی تولہ 2 لاکھ 50 ہزار 500 روپے کا ہو گیا کیرالہ میں وبائی انفیکشن ’نیپاہ‘ سے ہلاکت کے بعد الرٹ جاری پی ایس ایکس میں تیزی، 100 انڈیکس 447 پوائنٹس بڑھ گیا دادو کے ماحولیاتی نمونوں میں بھی پولیو وائرس کی تصدیق